گھڑی بھر خلوتوں کو آنچ دے کر بجھ گیا سورج

چندر بھان خیال

گھڑی بھر خلوتوں کو آنچ دے کر بجھ گیا سورج

چندر بھان خیال

MORE BYچندر بھان خیال

    گھڑی بھر خلوتوں کو آنچ دے کر بجھ گیا سورج

    کسی کے درد کی لے پر کہاں تک ناچتا سورج

    نگاہوں میں نئے انداز سے پھر روشنی ہوگی

    جب اگ آئے گا ذہنوں میں ہمارے اک نیا سورج

    زمیں کا کرب اوج آسماں پر بھی جھلک اٹھا

    نشیب کوہ پر جرأت سے جب جب آ ملا سورج

    ہمارے گھر کے آنگن میں ستارے بجھ گئے لاکھوں

    ہماری خواب گاہوں میں نہ چمکا صبح کا سورج

    شبستاں در شبستاں ظلمتوں کی ایک یورش ہے

    ہر اک دامن سے لپٹا ہے لرزتا ہانپتا سورج

    ہمارے بام در سے آج بھی لپٹی ہے تاریکی

    ہمارے آسمانوں میں بتاؤ کب اگا سورج

    سنا دی داستاں اپنی جو ہم نے بے زباں ہو کر

    مثال قطرہ شبنم بکھر کر رو پڑا سورج

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY