گھڑیاں عجیب ہوتی ہیں کچھ انتظار کی

بلال سہارن پوری

گھڑیاں عجیب ہوتی ہیں کچھ انتظار کی

بلال سہارن پوری

MORE BYبلال سہارن پوری

    گھڑیاں عجیب ہوتی ہیں کچھ انتظار کی

    حالت نہ پوچھیے گا دل بے قرار کی

    آنکھیں ہر ایک شخص کی رونے لگیں لہو

    موسم نے رخصتی جو سنائی بہار کی

    پتھر بھی مجھ کو راہ کے پہچاننے لگے

    کچھ ایسے خاک چھانی ہے اس کے دیار کی

    دامن ترا جب اس کو میسر نہ آ سکا

    عاشق نے تیرے راہ جنوں اختیار کی

    ہم مر گئے تھے اس سے بچھڑتے ہی اے بلالؔ

    اب جی رہے ہیں لے کے یہ سانسیں ادھار کی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY