گھر کو کیسا بھی تم سجا رکھنا

آصفہ زمانی

گھر کو کیسا بھی تم سجا رکھنا

آصفہ زمانی

MORE BYآصفہ زمانی

    گھر کو کیسا بھی تم سجا رکھنا

    کہیں غم کا بھی داخلہ رکھنا

    گر کسی کو سمجھنا اپنا تم

    دھوکہ کھانے کا حوصلہ رکھنا

    اتنی قربت کسی سے مت رکھو

    کچھ ضروری ہے فاصلہ رکھنا

    ان کی ہر بات میٹھی ہوتی ہے

    جھوٹی باتوں کا مت گلہ رکھنا

    زندگی ایک بار ملتی ہے

    اس کو جینے کا حوصلہ رکھنا

    ناامیدی کو کفر کہتے ہیں

    رب سے امید آصفہؔ رکھنا

    RECITATIONS

    نامعلوم

    نامعلوم

    نامعلوم

    گھر کو کیسا بھی تم سجا رکھنا نامعلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY