غبار دل پہ بہت آ گیا ہے دھو لیں آج

فرید جاوید

غبار دل پہ بہت آ گیا ہے دھو لیں آج

فرید جاوید

MORE BYفرید جاوید

    غبار دل پہ بہت آ گیا ہے دھو لیں آج

    کھلی فضا میں کہیں دور جا کے رو لیں آج

    دیار غیر میں اب دور تک ہے تنہائی

    یہ اجنبی در و دیوار کچھ تو بولیں آج

    تمام عمر کی بیداریاں بھی سہہ لیں گے

    ملی ہے چھاؤں تو بس ایک نیند سو لیں آج

    طرب کا رنگ محبت کی لو نہیں دیتا

    طرب کے رنگ میں کچھ درد بھی سمو لیں آج

    کسے خبر ہے کہ کل زندگی کہاں لے جائے

    نگاہ یار ترے ساتھ ہی نہ ہو لیں آج

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY