غبار درد میں راہ نجات ایسا ہی

شہرام سرمدی

غبار درد میں راہ نجات ایسا ہی

شہرام سرمدی

MORE BYشہرام سرمدی

    غبار درد میں راہ نجات ایسا ہی

    رہا ہے کوئی مرے ساتھ ساتھ ایسا ہی

    تو بھول پانے میں دشواریاں بہت ہوں گی

    کیا ہے پیار حد ممکنات ایسا ہی

    برس گزر گئے اس سے جدا ہوئے لیکن

    عجیب بین ہے موج فرات ایسا ہی

    اسے بھی اوس میں ڈوبا ہوا لگا تھا بدن

    مجھے بھی کچھ ہوا محسوس رات ایسا ہی

    میں جس سے خوف زدہ تھا شروع سے آخر

    تماشا کر گئی یہ کائنات ایسا ہی

    کوئی بھی رنگ میسر نہ آ سکا تو پھر

    قبول کر لیا رنگ حیات ایسا ہی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY