گداز دل سے پروانہ ہوا خاک

حکیم محمد اجمل خاں شیدا

گداز دل سے پروانہ ہوا خاک

حکیم محمد اجمل خاں شیدا

MORE BYحکیم محمد اجمل خاں شیدا

    گداز دل سے پروانہ ہوا خاک

    جیا بے سوز میں تو کیا جیا خاک

    کسی کے خون ناحق کی ہے سرخی

    رنگیں گی دست قاتل کو حنا خاک

    نگہ میں شرم کے بدلے ہے شوخی

    کھلے پھر رات کا کیا ماجرا خاک

    لبوں تک آ نہیں سکتا تو پھر میں

    کہوں کیا اپنے دل کا مدعا خاک

    بلندی سے ہے اس کی ڈر کہ اک روز

    کرے گی آشیاں برق بلا خاک

    نہ دیکھا جن کا چہرہ گرد آلود

    پڑی ہے ان پہ اب بے انتہا خاک

    بیاباں میں پھرا کرتے ہیں شیداؔ

    حقیقت میں ہے الفت کی دوا خاک

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY