گل و سمن کی طرح دل میں ہنس رہے ہیں ہم

کمال جعفری

گل و سمن کی طرح دل میں ہنس رہے ہیں ہم

کمال جعفری

MORE BYکمال جعفری

    گل و سمن کی طرح دل میں ہنس رہے ہیں ہم

    یہ اور بات بظاہر بجھے بجھے ہیں ہم

    کوئی بھی واہمہ گمراہ کر نہیں سکتا

    ترے خیال کی زنجیر میں بندھے ہیں ہم

    کبھی تو الجھا کئے کیسے کیسے لوگوں سے

    کبھی تو ایسے ہوا خود سے لڑ پڑے ہیں ہم

    نگار خانے میں تصویر خستہ تر کی طرح

    کسی کے سامنے کب سے سجے ہوئے ہیں ہم

    کئے ہیں اوروں پہ تنقید و تبصرے لیکن

    خود اپنا جائزہ اب تک نہ لے سکے ہیں ہم

    ہمیشہ آپ کو سمجھا کہ آپ اپنے ہیں

    ہمیشہ آپ نے سمجھا کہ دوسرے ہیں ہم

    کمالؔ ہم سے خوشامد کسی کی ہو نہ سکی

    اس اعتبار سے مشہور سرپھرے ہیں ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY