گم کردہ راہ خاک بسر ہوں ذرا ٹھہر

ذوالفقار علی بخاری

گم کردہ راہ خاک بسر ہوں ذرا ٹھہر

ذوالفقار علی بخاری

MORE BYذوالفقار علی بخاری

    گم کردہ راہ خاک بسر ہوں ذرا ٹھہر

    اے تیز رو غبار سفر ہوں ذرا ٹھہر

    رقص نمود یک دو نفس اور بھی سہی

    دوش ہوا پہ مثل شرر ہوں ذرا ٹھہر

    اپنا خرام تیز نہ کر اے نسیم زیست

    بجھنے کو ہوں چراغ سحر ہوں ذرا ٹھہر

    وہ دن قریب ہے کہ میں آنکھوں کو موند لوں

    یعنی ہلاک ذوق نظر ہوں ذرا ٹھہر

    اے دوست میری تلخ نوائی پہ تو نہ جا

    شیریں مثال خواب سحر ہوں ذرا ٹھہر

    جس راہ سے اٹھا ہوں وہیں بیٹھ جاؤں گا

    میں کارواں کی گرد سفر ہوں ذرا ٹھہر

    اے شہسوار حسن مجھے روند کر نہ جا

    واماندہ مثل راہ گزر ہوں ذرا ٹھہر

    اے آفتاب حسن مری کیا بساط ہے

    دریوزہ گر ہوں نور قمر ہوں ذرا ٹھہر

    موہوم سی امید ہوں مجھ سے گریز کیا

    اپنی کسی دعا کا اثر ہوں ذرا ٹھہر

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ذوالفقار علی بخاری

    ذوالفقار علی بخاری

    مأخذ :
    • کتاب : Range-e-Gazal (Pg. 201)
    • Author : shahzaad ahmad
    • مطبع : Ali Printers, 19-A Abate Road, Lahore (1988)
    • اشاعت : 1988

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY