حالات اب تو اتنے دشوار ہو گئے ہیں

نظیر صدیقی

حالات اب تو اتنے دشوار ہو گئے ہیں

نظیر صدیقی

MORE BYنظیر صدیقی

    حالات اب تو اتنے دشوار ہو گئے ہیں

    ہم نیم شب میں اکثر بیدار ہو گئے ہیں

    جو لوگ سادہ دل تھے پرکار ہو گئے ہیں

    اب آدمی کے رشتے دشوار ہو گئے ہیں

    یہ زندگی کی نعمت کس کو نہیں ہے پیاری

    مت پوچھ اس سے ہم کیوں بیزار ہو گئے ہیں

    عسرت میں جن کا شیوہ کل تک تھا خود فروشی

    دولت کے ملتے ہی وہ خوددار ہو گئے ہیں

    دشمن کو ہو گیا ہے اندازہ کچھ ہمارا

    دشمن سے ہم بھی لیکن ہشیار ہو گئے ہیں

    ماتم نہیں مناسب اب جان کے جہاں کا

    دشت طلب کے رستے ہموار ہو گئے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY