ہاں وہ میں ہی ہوں کہ جس کے ہیں یہاں پرساں بہت

عبدالسلام عاصم

ہاں وہ میں ہی ہوں کہ جس کے ہیں یہاں پرساں بہت

عبدالسلام عاصم

MORE BYعبدالسلام عاصم

    ہاں وہ میں ہی ہوں کہ جس کے ہیں یہاں پرساں بہت

    آئنہ ہے دیکھ کر صورت مری حیراں بہت

    اس ندی میں پار اترنے کے ہیں اندیشے ہزار

    اور اس میں ڈوب جانے کے بھی ہیں امکاں بہت

    درمیاں رشک و حسد کے آج بھی الجھے ہیں لوگ

    تھا گراں کل بھی علاج تشنگی داماں بہت

    جس گھڑی ٹوٹا تھا دونوں کے تعلق کا طلسم

    آسماں حیراں ہوا تھا اور زمیں گریاں بہت

    ہر مہاجر کے علاج غم کی ترجیحات میں

    ہم زباں مل جانا بھی ہے درد کا درماں بہت

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY