Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ہاتھ میں آفتاب پگھلا کر

عادل منصوری

ہاتھ میں آفتاب پگھلا کر

عادل منصوری

MORE BYعادل منصوری

    ہاتھ میں آفتاب پگھلا کر

    رات بھر روشنی سے کھیلا کر

    یوں کھلے سر نہ گھر سے نکلا کر

    دیکھ بوڑھوں کی بات مانا کر

    آئنہ آئینے میں کیا دیکھے

    ٹوٹ جاتے ہیں خواب ٹکرا کر

    ایک دم یوں اچھل نہیں پڑتے

    بات کے پینترے بھی سمجھا کر

    دیکھ ٹھوکر بنے نہ تاریکی

    کوئی سویا ہے پاؤں پھیلا کر

    اونٹ جانے کدھر نکل بھاگا

    جلتے صحرا میں ہم کو ٹھہرا کر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے