ہے عجب حال یہ زمانے کا

جون ایلیا

ہے عجب حال یہ زمانے کا

جون ایلیا

MORE BYجون ایلیا

    ہے عجب حال یہ زمانے کا

    یاد بھی طور ہے بھلانے کا

    پسند آیا بہت ہمیں پیشہ

    خود ہی اپنے گھروں کو ڈھانے کا

    کاش ہم کو بھی ہو نصیب کبھی

    عیش دفتر میں گنگنانے کا

    آسماں ہے خموشئ جاوید

    میں بھی اب لب نہیں ہلانے کا

    جان کیا اب ترا پیالۂ ناف

    نشہ مجھ کو نہیں پلانے کا

    شوق ہے اس دل درندہ کو

    آپ کے ہونٹ کاٹ کھانے کا

    اتنا نادم ہوا ہوں خود سے کہ میں

    اب نہیں خود کو آزمانے کا

    کیا کہوں جان کو بچانے میں

    جونؔ خطرہ ہے جان جانے کا

    یہ جہاں جونؔ اک جہنم ہے

    یاں خدا بھی نہیں ہے آنے کا

    زندگی ایک فن ہے لمحوں کو

    اپنے انداز سے گنوانے کا

    مأخذ :
    • کتاب : Gumaan (Poetry) (Pg. 165)
    • Author : Jaun Elia
    • مطبع : Takhleeqar Publishers (2012)
    • اشاعت : 2012

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY