ہے غلط فہمی ہوا کی اس سے ڈر جاتا ہوں میں

آصف رشید اسجد

ہے غلط فہمی ہوا کی اس سے ڈر جاتا ہوں میں

آصف رشید اسجد

MORE BYآصف رشید اسجد

    ہے غلط فہمی ہوا کی اس سے ڈر جاتا ہوں میں

    حوصلہ بن کر چراغوں میں اتر جاتا ہوں میں

    نیند کی آغوش میں تھک کر گروں میں جب کبھی

    خواب جی اٹھتے ہیں میرے اور مر جاتا ہوں میں

    گھر مکینوں سے بنا کرتا ہے پتھر سے نہیں

    بس اسی امید پر ہر روز گھر جاتا ہوں میں

    میں نے تجھ سے کیا کبھی پوچھا کدھر جاتی ہے تو

    اے شب آوارہ تجھ کو کیا کدھر جاتا ہوں میں

    میرے جانے پر نہ ہو گھر کی اداسی یوں ملول

    تو اگر گھبرا گئی ہے تو ٹھہر جاتا ہوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY