ہے مستقل یہی احساس کچھ کمی سی ہے

عاصم واسطی

ہے مستقل یہی احساس کچھ کمی سی ہے

عاصم واسطی

MORE BYعاصم واسطی

    ہے مستقل یہی احساس کچھ کمی سی ہے

    تلاش میں ہے نظر دل میں بیکلی سی ہے

    کسی بھی کام میں لگتا نہیں ہے دل میرا

    بڑے دنوں سے طبیعت بجھی بجھی سی ہے

    بڑی عجیب اداسی ہے مسکراتا ہوں

    جو آج کل مری حالت ہے شاعری سی ہے

    گزر رہے ہیں شب و روز بے سبب میرے

    یہ زندگی تو نہیں صرف زندگی سی ہے

    تھکی تو ایک محبت نے موند لی آنکھیں

    ہر ایک نیند سے اب میری دشمنی سی ہے

    ترے بغیر کہاں ہے سکون کیا آرام

    کہیں رہوں مری تکلیف بے گھری سی ہے

    نہیں وہ شمع محبت رہی تو پھر عاصمؔ

    یہ کس دعا سے مرے گھر میں روشنی سی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY