ہم آخری ہیں ہمارے جیسے سو اب ہمارا خلا بنے گا

بابر علی اسد

ہم آخری ہیں ہمارے جیسے سو اب ہمارا خلا بنے گا

بابر علی اسد

MORE BYبابر علی اسد

    ہم آخری ہیں ہمارے جیسے سو اب ہمارا خلا بنے گا

    نہ میں ہی بار دگر ہوں ممکن نہ تجھ سا ہی دوسرا بنے گا

    یہ تنگ ذہنوں سے بات کر کے رکاوٹیں ہی نہ دور کر لیں

    کئی مزاجوں کی خیر ہوگی اگر یہ رستہ کھلا بنے گا

    قسم تری بے نیازیوں کی میں سب یہ پہلے ہی جانتا تھا

    مجھے کسی نے کہا ہوا تھا یہ تیرے ہاتھوں خدا بنے گا

    نہیں محبت وہ کار امکاں دعا پہ رکھیں خدا پہ چھوڑیں

    تم اس کو فرضی سے مت بناؤ معاملہ مسئلہ بنے گا

    ترے ہنر کی ہو خیر آزر ہمیں جو توڑو تو دھیان رکھیو

    ہماری مٹی تو بھر بھری ہے ہماری مٹی سے کیا بنے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY