ہم بدلتے نہیں بدلتے ہیں

ادریس آزاد

ہم بدلتے نہیں بدلتے ہیں

ادریس آزاد

MORE BYادریس آزاد

    ہم بدلتے نہیں بدلتے ہیں

    اس لیے ہم سے لوگ جلتے ہیں

    وقت کا کون انتظار کرے

    چل زمانے کے ساتھ چلتے ہیں

    غم نکلتے تو ہیں پہ گاہ بگاہ

    آہ کے ڈر سے کم نکلتے ہیں

    آپ ہی عمر کا خیال کریں

    یہ تو ارمان ہیں مچلتے ہیں

    تم نہ آؤ تو میری آنکھوں میں

    پھول کھلتے نہیں ہیں کھلتے ہیں

    چاند کے ساتھ ہم ابھرتے ہیں

    لوگ سورج کے ساتھ ڈھلتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے