ہم نہ دنیا کے ہیں نہ دیں کے ہیں

عمران الحق چوہان

ہم نہ دنیا کے ہیں نہ دیں کے ہیں

عمران الحق چوہان

MORE BYعمران الحق چوہان

    ہم نہ دنیا کے ہیں نہ دیں کے ہیں

    ہم تو اک زلف عنبریں کے ہیں

    شیشہ و مے سے بے نیاز ہیں ہم

    مست اس چشم سرمگیں کے ہیں

    رنگ ہو روشنی ہو یا خوشبو

    سب میں پرتو اسی حسیں کے ہیں

    چشم بے خواب دامن گلگوں

    سب کرشمے اسی ذہیں کے ہیں

    ہیں مکیں قریۂ محبت کے

    آسماں کے نہ ہم زمیں کے ہیں

    آئے تھے شہر حسن میں اک دن

    اور اک عمر سے یہیں کے ہیں

    آیتیں ہیں ہماری قسمت کی

    یہ جو چتون تری جبیں کے ہیں

    ظلمت شام ہجر سے عمرانؔ

    تذکرے ایک مہ جبیں کے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY