ہم نے جو دیپ جلائے ہیں تری گلیوں میں

وصی شاہ

ہم نے جو دیپ جلائے ہیں تری گلیوں میں

وصی شاہ

MORE BYوصی شاہ

    ہم نے جو دیپ جلائے ہیں تری گلیوں میں

    اپنے کچھ خواب سجائے ہیں تری گلیوں میں

    جانے یہ عشق ہے یا کوئی کرامت اپنی

    چاند لے کر چلے آئے ہیں تری گلیوں میں

    تذکرہ ہو تری گلیوں کا تو ڈر جاتا ہے

    دل نے وہ زخم اٹھائے ہیں تری گلیوں میں

    اس لئے بھی تری گلیوں سے ہمیں نفرت ہے

    ہم نے ارمان گنوائے ہیں تری گلیوں میں

    کیوں ہر اک چیز ادھوری سی ہمیں لگتی ہے

    جانے کیا چھوڑ کے آئیں ہیں تری گلیوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے