ہم نے کاٹی ہیں تری یاد میں راتیں اکثر

جاں نثاراختر

ہم نے کاٹی ہیں تری یاد میں راتیں اکثر

جاں نثاراختر

MORE BY جاں نثاراختر

    ہم نے کاٹی ہیں تری یاد میں راتیں اکثر

    دل سے گزری ہیں ستاروں کی براتیں اکثر

    اور تو کون ہے جو مجھ کو تسلی دیتا

    ہاتھ رکھ دیتی ہیں دل پر تری باتیں اکثر

    حسن شائستۂ تہذیب الم ہے شاید

    غم زدہ لگتی ہیں کیوں چاندنی راتیں اکثر

    حال کہنا ہے کسی سے تو مخاطب ہے کوئی

    کتنی دلچسپ ہوا کرتی ہیں باتیں اکثر

    عشق رہزن نہ سہی عشق کے ہاتھوں پھر بھی

    ہم نے لٹتی ہوئی دیکھی ہیں براتیں اکثر

    ہم سے اک بار بھی جیتا ہے نہ جیتے گا کوئی

    وہ تو ہم جان کے کھا لیتے ہیں ماتیں اکثر

    ان سے پوچھو کبھی چہرے بھی پڑھے ہیں تم نے

    جو کتابوں کی کیا کرتے ہیں باتیں اکثر

    ہم نے ان تند ہواؤں میں جلائے ہیں چراغ

    جن ہواؤں نے الٹ دی ہیں بساطیں اکثر

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY