ہم صد ہزار بار تجھے دیکھتے رہے

افتخار شاھد ابو سعد

ہم صد ہزار بار تجھے دیکھتے رہے

افتخار شاھد ابو سعد

MORE BYافتخار شاھد ابو سعد

    ہم صد ہزار بار تجھے دیکھتے رہے

    تھا شوق بے مہار تجھے دیکھتے رہے

    کچھ نے تو مسکرا کے کہا الوداع مگر

    کچھ لوگ اشک بار تجھے دیکھتے رہے

    پھر یوں ہوا کہ سارے بدن پر نکل پڑیں

    آنکھیں کئی ہزار تجھے دیکھتے رہے

    دیوار جاں سے نقش تو تحلیل ہو گئے

    مژگاں کے آر پار تجھے دیکھتے رہے

    اے حسن لا زوال تو آیا جو بام پر

    صدیوں کے بیقرار تجھے دیکھتے رہے

    دیدہ وران شوق نہ آنکھیں جھپک سکے

    لمحوں کا کیا شمار تجھے دیکھتے رہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY