ہماری فکر بھی خستہ ہمارے کار غلط

مسعود حساس

ہماری فکر بھی خستہ ہمارے کار غلط

مسعود حساس

MORE BYمسعود حساس

    ہماری فکر بھی خستہ ہمارے کار غلط

    ہماری جست نے بخشا ہمیں حصار غلط

    کہیں یہ قلب‌‌ حوادث کی تاب لا نہ سکے

    کہیں یہ دل ہی نہ لے لے کوئی قرار غلط

    یہ میرا دل ہے تمنائیں پال لیتا ہے

    ہوا ہے اس پہ بھی سایہ کوئی سوار غلط

    مجھے یقیں ہے نہ آئیں گے میری تربت پر

    برائے فاتحہ چنیے گا کب مزار غلط

    یہ کس نے ابروئے خم دار سے مجھے دیکھا

    کہاں سے آ گئی حق میں مرے بہار غلط

    مرے نصیب کے قوسین نے دیا تحفہ

    کبھی تو لیل‌‌ مسلسل کبھی نہار غلط

    میں اپنی اوج کا تم کو حساب کیا دیتا

    مری لکیر تھی الجھی مرا مدار غلط

    میں اپنے زخم جگر سوز و ساز کیوں لکھوں

    ہزار بار گنا پھر بھی ہے شمار غلط

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY