ہمیں یہ راز سبھی کو بتانا ہوتا ہے

اعجاز توکل

ہمیں یہ راز سبھی کو بتانا ہوتا ہے

اعجاز توکل

MORE BYاعجاز توکل

    ہمیں یہ راز سبھی کو بتانا ہوتا ہے

    نئے کے بعد ہی کوئی پرانا ہوتا ہے

    بلا جواز نہیں بولتا ہوں دیر تلک

    کہ میں نے بات کو آگے بڑھانا ہوتا ہے

    یوں ہی نہیں مری آنکھوں میں اشک لہراتے

    کہ ہر کسی نے مرا دل دکھانا ہوتا ہے

    یہ منصفین کسی کو بھی حق نہیں دیتے

    خدا کا فیصلہ ہی منصفانہ ہوتا ہے

    یہ دشت والے میاں ہجر گنگناتے ہیں

    ہر ایک خطے کا قومی ترانہ ہوتا ہے

    کسی کو دے دی ہے تحفے میں یوسفی کی کتاب

    کہ ہم نے کونسا اب مسکرانا ہوتا ہے

    ہماری بات وگرنہ کوئی نہیں سنتا

    لہٰذا شور تو ہم نے مچانا ہوتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY