ہنستے تھے مرے حال کو جو یار دیکھ کر

مرزا محمد تقی ہوسؔ

ہنستے تھے مرے حال کو جو یار دیکھ کر

مرزا محمد تقی ہوسؔ

MORE BYمرزا محمد تقی ہوسؔ

    ہنستے تھے مرے حال کو جو یار دیکھ کر

    ان سب نے رو دیا مجھے بیمار دیکھ کر

    سب ہم صفیر چھوڑ کے تنہا چلے گئے

    کنج قفس میں مجھ کو گرفتار دیکھ کر

    کیا جانے کیا غضب ہے یہ جادو بھری نگاہ

    غش کر گیا ہوں میں جسے یک بار دیکھ کر

    خون جگر کے ساتھ کہیں جی چلا نہ جائے

    رونا ذرا تو دیدۂ خوں بار دیکھ کر

    اپنے ہوسؔ پہ جب سے کہ تو مہرباں ہوا

    جلتے ہیں رات دن اسے اغیار دیکھ کر

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    ہنستے تھے مرے حال کو جو یار دیکھ کر نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY