حق جتانے کا بھی تجھ میں حوصلہ نہیں رہا

ششی کانت ورما

حق جتانے کا بھی تجھ میں حوصلہ نہیں رہا

ششی کانت ورما

MORE BYششی کانت ورما

    حق جتانے کا بھی تجھ میں حوصلہ نہیں رہا

    عشق ہی نہیں رہا یا پھر گلہ نہیں رہا

    تیری یادیں ہی سبب ہے میری اس ہنسی کا اب

    یعنی یادوں میں میں آنسو بھی ملا نہیں رہا

    تجھ میں ہی ہے میری روشنی کا حل وگرنہ پھر

    اک ستارہ ہوں تو کیوں میں جھلملا نہیں رہا

    مطمئن ہے باغباں بھی جان کر کہ باگ میں

    پھول کوئی بھی ہمیشہ ہی کھلا نہیں رہا

    یہ ہو سکتا ہے تجھے اجالا ایسے ہی ملے

    کیا ہوا تجھے تو کیوں مجھے جلا نہیں رہا

    کچھ تری طرح ہی ہے حساب آسمان کا

    فاصلہ سے دیکھتا ہے پر بلا نہیں رہا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY