ہر ایک گام پہ آسودگی کھڑی ہوگی

اعزاز افصل

ہر ایک گام پہ آسودگی کھڑی ہوگی

اعزاز افصل

MORE BYاعزاز افصل

    ہر ایک گام پہ آسودگی کھڑی ہوگی

    سفر کی آخری منزل بہت کڑی ہوگی

    یہ اپنے خون کی لہروں میں ڈوبتی کشتی

    بھنور سے بھاگ کے ساحل پہ جا پڑی ہوگی

    مسافرو یہ خلش نوک خار کی تو نہیں

    ضرور پاؤں تلے کوئی پنکھڑی ہوگی

    ترے خلوص تحفظ میں شک نہیں لیکن

    ہوا میں ریت کی دیوار گر پڑی ہوگی

    نظام قید مسلسل میں کیسی آزادی

    کھلے جو پاؤں تو ہاتھوں میں ہتھکڑی ہوگی

    ترے فرار کی سرحد قریب تھی لیکن

    مری تلاش ذرا دور جا پڑی ہوگی

    تمہارے دور مسلسل کی منضبط تاریخ

    ہمارے رقص مسلسل کی اک کڑی ہوگی

    مرے گمان کی بنیاد کھوکھلی نکلی

    ترے یقیں کی عمارت کہاں کھڑی ہوگی

    مآخذ
    • کتاب : Kalam-e-aizaz afzal (Pg. 167)
    • Author : Aizaz Afzal
    • مطبع : Usmania Book Depot

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY