ہر گھڑی فکر راستی کیا ہے

اختر سعید

ہر گھڑی فکر راستی کیا ہے

اختر سعید

MORE BY اختر سعید

    ہر گھڑی فکر راستی کیا ہے

    اک مصیبت ہے زندگی کیا ہے

    گھپ اندھیرا ہے میرے چاروں اور

    اس میں تھوڑی سی روشنی کیا ہے

    بہت الجھا ہوا حساب ہے یہ

    میرا کھاتا ہے کیا بہی کیا ہے

    نام ہیں نفس کی پرستش کے

    دوستی کیا ہے دشمنی کیا ہے

    شہر میں رہ کے دیکھیے اک دن

    دور جنگل میں راہبی کیا ہے

    ساری باتوں کا میں مصنف ہوں

    میرے آگے لکھی سنی کیا ہے

    میں نے دیکھا ہے خوں کی شمعوں سے

    گم رہی کیا ہے رہروی کیا ہے

    عہد پیری میں اپنی لوح ضمیر

    صاف ہو گر تو خسروی کیا ہے

    یہ تضادات یہ سراب یہ دل

    زندگی کیا ہے آدمی کیا ہے

    بند اشکال میں مقید ہوں

    عقل کس کام آگہی کیا ہے

    سوچتا ہوں تو کچھ نہیں کھلتا

    جانتا ہوں مگر بدی کیا ہے

    دل میں وسواس یا علیؑ کیوں ہے

    سر محجوب یا نبی کیا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY