ہر کسی کی یہی اک کہانی ملی

ہمادری ورما

ہر کسی کی یہی اک کہانی ملی

ہمادری ورما

MORE BYہمادری ورما

    ہر کسی کی یہی اک کہانی ملی

    ڈھونڈھی خوشیاں تو غم کی نشانی ملی

    خوف سے شہر سہمے ملے تھے سبھی

    غم زدہ ان میں ان کی جوانی ملی

    ایک عرصہ ہوا جو نہ ہنس کے ملے

    ہنستی تصویر ان کی پرانی ملی

    ہم رہے بد دعا سے صدا بے اثر

    ہم کو ماں کی دعا آسمانی ملی

    روٹی دو تھی تو اک بھوکے سے بانٹ لی

    ہم کو تہذیب یہ خاندانی ملی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے