ہر موسم میں خالی پن کی مجبوری ہو جاؤ گے

رؤف رضا

ہر موسم میں خالی پن کی مجبوری ہو جاؤ گے

رؤف رضا

MORE BYرؤف رضا

    ہر موسم میں خالی پن کی مجبوری ہو جاؤ گے

    اتنا اس کو یاد کیا تو پتھر بھی ہو جاؤ گے

    ہنستے بھی ہو روتے بھی ہو آج تلک تو ایسا ہے

    جب یہ موسم ساتھ نہ دیں گے تصویری ہو جاؤ گے

    ہر آنے جانے والے سے گھر کا رستہ پوچھتے ہو

    خود کو دھوکا دیتے دیتے بے گھر بھی ہو جاؤ گے

    جینا مرنا کیا ہوتا ہے ہم تو اس دن پوچھیں گے

    جس دن مٹی کے ہاتھوں کی تم مہندی ہو جاؤ گے

    چھوٹی چھوٹی باتوں کو بھی اتنا سجا کر لکھتے ہو

    ایسے ہی تحریر رہی تو بازاری ہو جاؤ گے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    رؤف رضا

    رؤف رضا

    RECITATIONS

    رؤف رضا

    رؤف رضا

    رؤف رضا

    ہر موسم میں خالی پن کی مجبوری ہو جاؤ گے رؤف رضا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY