جلا کے مشعل جاں ہم جنوں صفات چلے

مجروح سلطانپوری

جلا کے مشعل جاں ہم جنوں صفات چلے

مجروح سلطانپوری

MORE BYمجروح سلطانپوری

    جلا کے مشعل جاں ہم جنوں صفات چلے

    جو گھر کو آگ لگائے ہمارے ساتھ چلے

    دیار شام نہیں منزل سحر بھی نہیں

    عجب نگر ہے یہاں دن چلے نہ رات چلے

    ہمارے لب نہ سہی وہ دہان زخم سہی

    وہیں پہنچتی ہے یارو کہیں سے بات چلے

    ستون دار پہ رکھتے چلو سروں کے چراغ

    جہاں تلک یہ ستم کی سیاہ رات چلے

    ہوا اسیر کوئی ہم نوا تو دور تلک

    بپاس طرز نوا ہم بھی ساتھ ساتھ چلے

    بچا کے لائے ہم اے یار پھر بھی نقد وفا

    اگرچہ لٹتے رہے رہزنوں کے ہاتھ چلے

    پھر آئی فصل کہ مانند برگ آوارہ

    ہمارے نام گلوں کے مراسلات چلے

    قطار شیشہ ہے یا کاروان ہم سفراں

    خرام جام ہے یا جیسے کائنات چلے

    بھلا ہی بیٹھے جب اہل حرم تو اے مجروحؔ

    بغل میں ہم بھی لیے اک صنم کا ہاتھ چلے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    مجروح سلطانپوری

    مجروح سلطانپوری

    مجروح سلطانپوری

    مجروح سلطانپوری

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    مجروح سلطانپوری

    مجروح سلطانپوری

    مجروح سلطانپوری

    مجروح سلطانپوری

    نعمان شوق

    جلا کے مشعل جاں ہم جنوں صفات چلے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY