حیا تو اس سے شرماتی بہت ہے

پروین کیف

حیا تو اس سے شرماتی بہت ہے

پروین کیف

MORE BYپروین کیف

    حیا تو اس سے شرماتی بہت ہے

    پڑوسن میری اتراتی بہت ہے

    وہ گھر میں چین سے رہتی ہے کم کم

    مگر چھت پر نظر آتی بہت ہے

    نہیں سنتی کسی کی اپنے آگے

    سمجھتی کم ہے سمجھاتی بہت ہے

    کرے ہے گفتگو سرگوشیوں میں

    مگر زیور تو کھنکاتی بہت ہے

    بڑی سنجیدہ بنتی ہے وہ لیکن

    میاں سے چھپ کے مستانی بہت ہے

    مرے اللہ اس کی گود بھر دے

    وہ تنہا لوریاں گاتی بہت ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY