ہجر کی رعنائی مجھ سے چھین لی

طاہر عدیم

ہجر کی رعنائی مجھ سے چھین لی

طاہر عدیم

MORE BYطاہر عدیم

    ہجر کی رعنائی مجھ سے چھین لی

    یاد نے تنہائی مجھ سے چھین لی

    آنکھ کھلتے ہی تمہاری یاد نے

    ٹوٹتی انگڑائی مجھ سے چھین لی

    اس کے ہونٹوں کی شفق نے آج پھر

    قوت گویائی مجھ سے چھین لی

    ہاتھ میں اس نے تھمایا اک دیا

    اور پھر بینائی مجھ سے چھین لی

    دل میں جینے کی جو خواہش تھی کبھی

    تو نے وہ ہرجائی مجھ سے چھین لی

    دست دنیا نے کبھی تقدیر نے

    چیز جو بھی بھائی مجھ سے چھین لی

    ان مشینوں نے مشینی دور نے

    خوبی و زیبائی مجھ سے چھین لی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے