ہو گئے دن جنہیں بھلائے ہوئے

انور شعور

ہو گئے دن جنہیں بھلائے ہوئے

انور شعور

MORE BYانور شعور

    ہو گئے دن جنہیں بھلائے ہوئے

    آج کل ہیں وہ یاد آئے ہوئے

    میں نے راتیں بہت گزاری ہیں

    صرف دل کا دیا جلائے ہوئے

    ایک اسی شخص کا نہیں مذکور

    ہم زمانے کے ہیں ستائے ہوئے

    سونے آتے ہیں لوگ بستی میں

    سارے دن کے تھکے تھکائے ہوئے

    مسکرائے بغیر بھی وہ ہونٹ

    نظر آتے ہیں مسکرائے ہوئے

    گو فلک پہ نہیں پلک پہ سہی

    دو ستارے ہیں جگمگائے ہوئے

    اے شعورؔ اور کوئی بات کرو

    ہیں یہ قصے سنے سنائے ہوئے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY