Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ہونٹ مصروف دعا آنکھ سوالی کیوں ہے

وجیہ ثانی

ہونٹ مصروف دعا آنکھ سوالی کیوں ہے

وجیہ ثانی

MORE BYوجیہ ثانی

    ہونٹ مصروف دعا آنکھ سوالی کیوں ہے

    دل کے مانند مرا ذہن بھی خالی کیوں ہے

    وہ تو ناراض ہے مجھ سے تو پھر آخر اس نے

    مسکراہٹ سی مری سمت اچھالی کیوں ہے

    اس کو حیرت مرے شعروں پہ نہیں اس پر ہے

    میرے شانے پہ جو چادر ہے وہ کالی کیوں ہے

    وہ بھی کیا دن تھے تری سوچ کو چھو سکتا تھا

    اب ترا عکس فقط عکس خیالی کیوں ہے

    کیا بتاؤگے کہ ہم میں سے وفا کس نے کی

    تم نے محفل میں مری بات نکالی کیوں ہے

    اس ارادے سے میں بیٹھا تھا غزل لکھنے کو

    سوچتا ہوں تری تصویر بنا لی کیوں ہے

    اب میں جانے نہیں دیتا تو برا مانتی ہو

    اس قدر پیار کی عادت مجھے ڈالی کیوں ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Mohabbat Rasty me.n hai (Pg. 133)
    • Author : Wajih Sani
    • مطبع : Samiya Publication (2016)
    • اشاعت : 2016

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے