ہوئے ہیں رام پیتم کے نین آہستہ آہستہ

ولی محمد ولی

ہوئے ہیں رام پیتم کے نین آہستہ آہستہ

ولی محمد ولی

MORE BYولی محمد ولی

    ہوئے ہیں رام پیتم کے نین آہستہ آہستہ

    کہ جیوں پھاندے میں آتے ہیں ہرن آہستہ آہستہ

    مرا دل مثل پروانے کے تھا مشتاق جلنے کا

    لگی اس شمع سوں آخر لگن آہستہ آہستہ

    گریباں صبر کا مت چاک کر اے خاطر مسکیں

    سنے گا بات وو شیریں بچن آہستہ آہستہ

    گل و بلبل کا گلشن میں خلل ہووے تو برجا ہے

    چمن میں جب چلے وو گل بدن آہستہ آہستہ

    ولیؔ سینے میں میرے پنجۂ عشق ستم گر نے

    کیا ہے چاک دل کا پیرہن آہستہ آہستہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY