حرمت عشق تجھے داغ لگانے کا نہیں

یونس تحسین

حرمت عشق تجھے داغ لگانے کا نہیں

یونس تحسین

MORE BYیونس تحسین

    حرمت عشق تجھے داغ لگانے کا نہیں

    بات بنتی نہ بنے بات سے جانے کا نہیں

    یا خدا خیر کہ ہم دونوں انا والے ہیں

    وہ بلانے کا نہیں اور میں جانے کا نہیں

    وحشتی ہوں سو گریبان کو آ سکتا ہوں

    مجھ سے ڈرنے کا مگر مجھ کو ڈرانے کا نہیں

    بوڑھے اعصاب کہاں سہتے ہیں اولاد کا دکھ

    میری تکلیف مری ماں کو بتانے کا نہیں

    ہم تو اک ایسی زمیں پر ہیں جہاں لاشیں ہیں

    تم نے جو نقشہ دیا تھا وہ خزانے کا نہیں

    میں ازل تا بہ ابد اور ابد تا دائم

    اس کا مطلب میں کسی ایک زمانے کا نہیں

    درس یہ خاص ہمیں آل پیمبر سے ملا

    سر کٹانے کا مگر سر کو جھکانے کا نہیں

    میں ابوبکر و علی والا ہوں یونس تحسینؔ

    مجھ کو ملا کے مسالک سے ملانے کا نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY