حسن کی شمع کا ہوں پروانہ

جوہر زاہری

حسن کی شمع کا ہوں پروانہ

جوہر زاہری

MORE BY جوہر زاہری

    حسن کی شمع کا ہوں پروانہ

    خلق کہتی ہے مجھ کو دیوانہ

    نقش پا پر گئے کیے سجدے

    کس قدر ہوش میں تھا دیوانہ

    ہوش جاتے رہیں گے جانے دو

    تم سنو گے ہمارا افسانہ

    تیری محفل سے اٹھ کے جاتے ہیں

    اب بسائیں گے کوئی ویرانہ

    جس نے رکھا قدم محبت میں

    عقل سے ہو گیا وہ بیگانہ

    تیری آنکھوں کے کیف سے ساقی

    رقص میں ہے تمام مے خانہ

    بادۂ غم نے بھر دیا جوہرؔ

    زندگانی کا میری پیمانہ

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY