حسن سے شرح ہوئی عشق کے افسانے کی

آرزو لکھنوی

حسن سے شرح ہوئی عشق کے افسانے کی

آرزو لکھنوی

MORE BY آرزو لکھنوی

    حسن سے شرح ہوئی عشق کے افسانے کی

    شمع لو دے کے زباں بن گئی پروانے کی

    شان بستی سے نہیں کم مرے ویرانے کی

    روح ہر بونڈلے میں ہے کسی دیوانے کی

    آمد موسم گل کی ہے خبر دور دگر

    تازگی چاہئے کچھ ساخت میں پیمانے کی

    آئی ہے کاٹ کے میعاد اسیری کی بہار

    ہتکڑی کھل کے گری جاتی ہے دیوانے کی

    سرد اے شمع نہ ہو گرمی بازار جمال

    پھونک دے روح نئی لاش میں پروانے کی

    اٹھ کھڑا ہو تو بگولا ہے جو بیٹھے تو غبار

    خاک ہو کر بھی وہی شان ہے دیوانے کی

    آرزوؔ ختم حقیقت پہ ہوا دور مجاز

    ڈالی کعبے کی بنا آڑ سے بت خانے کی

    RECITATIONS

    آرزو لکھنوی

    آرزو لکھنوی

    آرزو لکھنوی

    حسن سے شرح ہوئی عشق کے افسانے کی آرزو لکھنوی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY