حصول مقصد میں آخرش یوں رہے گی قسمت دخیل کب تک

احتشام الحق صدیقی

حصول مقصد میں آخرش یوں رہے گی قسمت دخیل کب تک

احتشام الحق صدیقی

MORE BYاحتشام الحق صدیقی

    حصول مقصد میں آخرش یوں رہے گی قسمت دخیل کب تک

    تم اپنی ناکامیوں پہ دو گے مقدروں کی دلیل کب تک

    سمندروں کی ریاستوں کو لٹا کے آوارہ پھرنے والو

    اب ایک قطرہ کی منتوں سے کرو گے خود کو ذلیل کب تک

    تو مرد مومن ہے اپنی منزل کو آسمانوں پہ دیکھ ناداں

    کہ راہ ظلمت میں ساتھ دے گا کوئی چراغ علیل کب تک

    جلال رفتہ کو بھول بھی جا ضرورت حال پر نظر کر

    رکھے گا چولھے کی آگ ٹھنڈی پئے وقار قبیل کب تک

    درازئ قد سے آدمی کو نصیب ہوتی نہیں بلندی

    تجھے فریب فراز دے گی یہ کجکلاہ طویل کب تک

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY