اک اشک بہا ہوگا

احمد عطا

اک اشک بہا ہوگا

احمد عطا

MORE BYاحمد عطا

    اک اشک بہا ہوگا

    اک شعر ہوا ہوگا

    چپ چاپ پڑے ہیں ہم

    دل راکھ ہوا ہوگا

    اک خواب سہارا تھا

    وہ ٹوٹ گیا ہوگا

    دل نے تو ان آنکھوں پر

    الزام دھرا ہوگا

    ہے عشق تو ہے ہم کیش

    دل میں کوئی تھا ہوگا

    کیا نور تھا پانی میں

    آنکھوں سے بہا ہوگا

    پھر یار نہیں آئے

    پھر جام دھرا ہوگا

    اک شعلہ فزوں ہو کر

    جلتا بھی رہا ہوگا

    شب خواب میں آیا وہ

    کیا کیا نہ ہوا ہوگا

    تاثیر کہاں سچ میں

    کچھ جھوٹ کہا ہوگا

    اس دل کے خرابے میں

    اک شہر بسا ہوگا

    مٹھی میں ہے دل کیسے

    رستے میں ملا ہوگا

    کہنے کی نہیں باتیں

    باتوں سے بھی کیا ہوگا

    اک خواب تمنا نے

    برباد کیا ہوگا

    وہ سوختہ سر تھا کون

    ہوگا تو عطاؔ ہوگا

    مآخذ :
    • کتاب : Aankh Bhar Tamasha Hai (Pg. 101)
    • Author : Ahmad Ata
    • مطبع : Sanjh Publications (2015)
    • اشاعت : 2015

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY