اک خلا سا ہے جدھر دیکھو ادھر کچھ بھی نہیں

یعقوب عامر

اک خلا سا ہے جدھر دیکھو ادھر کچھ بھی نہیں

یعقوب عامر

MORE BYیعقوب عامر

    اک خلا سا ہے جدھر دیکھو ادھر کچھ بھی نہیں

    آسماں کون و مکاں دیوار و در کچھ بھی نہیں

    بڑھتا جاتا ہے اندھیرا جیسے جادو ہو کوئی

    کوئی پڑھ لیجے دعا لیکن اثر کچھ بھی نہیں

    جسم پر ہے کون سے عفریت کا سایہ سوار

    بھاگتا ہے سر سے دھڑ جیسے کہ سر کچھ بھی نہیں

    ہر نیا رستہ نکلتا ہے جو منزل کے لیے

    ہم سے کہتا ہے پرانی رہ گزر کچھ بھی نہیں

    اہتمام زندگی سے ہیں یہ سب نقش و نگار

    ورنہ گھر کچھ بھی نہیں دیوار و در کچھ بھی نہیں

    گھر میں اپنے ساتھ جب رکھوگے عامرؔ دیکھنا

    جس کو تم کہتے ہو اب رشک قمر کچھ بھی نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY