اک شرار گرفتہ رنگ ہوں میں

سحر انصاری

اک شرار گرفتہ رنگ ہوں میں

سحر انصاری

MORE BYسحر انصاری

    اک شرار گرفتہ رنگ ہوں میں

    پھول سے لے کے تا بہ سنگ ہوں میں

    باد صرصر کی طرح گرم عناں

    سینۂ ریگ کی امنگ ہوں میں

    ذرہ ذرہ نے کر دیا حیراں

    اور حیرانیوں پہ دنگ ہوں میں

    فتح بھی اک شکست ہی ہوگی

    آرزوؤں سے محو جنگ ہوں میں

    کیسے تجھ کو بہا کے لے جاؤں

    موج ہمسایۂ نہنگ ہوں میں

    شہر و صحرا کی کچھ نہیں تخصیص

    وسعت دشت جاں سے تنگ ہوں میں

    کس نے دیکھا فشار موجۂ جاں

    آج تک آب زیر سنگ ہوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY