اس گھنی شب کا سویرا نہیں آنے والا

سلیمان خمار

اس گھنی شب کا سویرا نہیں آنے والا

سلیمان خمار

MORE BYسلیمان خمار

    اس گھنی شب کا سویرا نہیں آنے والا

    اب کہیں سے بھی اجالا نہیں آنے والا

    جبرئیل اب نہیں آئیں گے زمیں پر ہرگز

    پھر سے آیات کا تحفہ نہیں آنے والا

    ہو گئے دفن شب و روز پرانے کب کے

    لوٹ کر پھر وہ زمانہ نہیں آنے والا

    پیڑ تو سارے ہی بے برگ ہوئے جاتے ہیں

    دھوپ تو آئے گی سایہ نہیں آنے والا

    یہ بھی سچ ہے کہ اجل بن کے کھڑے ہیں امراض

    یہ بھی طے ہے کہ مسیحا نہیں آنے والا

    ہم کو سہنا ہے اکیلے ہی ہر اک درد کا بوجھ

    خیر خواہوں کا دلاسہ نہیں آنے والا

    میرے افکار کے سوتے نہیں تھمنے والے

    میری سوچوں پہ بڑھاپا نہیں آنے والا

    نئے لفظوں کو برتنے کا سلیقہ بھی تو ہو

    صرف الفاظ سے لہجہ نہیں آنے والا

    جھوٹ بے پاؤں بھی دوڑے گا بہت تیز خمارؔ

    لب پہ سچائی کا چرچا نہیں آنے والا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے