اس زمیں آسماں کے تھے ہی نہیں

فاروق بخشی

اس زمیں آسماں کے تھے ہی نہیں

فاروق بخشی

MORE BY فاروق بخشی

    اس زمیں آسماں کے تھے ہی نہیں

    رابطے درمیاں کے تھے ہی نہیں

    ہم سے مٹی مہک گئی کیسے

    ہم تو اس خاکداں کے تھے ہی نہیں

    کیسے کرتے رقم حدیث دل

    واقعے سب بیاں کے تھے ہی نہیں

    ہم وہ کردار کیسے بن جاتے

    جب تری داستاں کے تھے ہی نہیں

    ان سے تہذیب کی توقع تھی

    وہ جو اردو زباں کے تھے ہی نہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    فاروق بخشی

    فاروق بخشی

    RECITATIONS

    فاروق بخشی

    فاروق بخشی

    فاروق بخشی

    فاروق بخشی

    فاروق بخشی

    اس زمیں آسماں کے تھے ہی نہیں فاروق بخشی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY