عشق میں نے لکھ ڈالا قومیت کے خانے میں

عامر امیر

عشق میں نے لکھ ڈالا قومیت کے خانے میں

عامر امیر

MORE BYعامر امیر

    عشق میں نے لکھ ڈالا قومیت کے خانے میں

    اور تیرا دل لکھا شہریت کے خانے میں

    مجھ کو تجربوں نے ہی باپ بن کے پالا ہے

    سوچتا ہوں کیا لکھوں ولدیت کے خانے میں

    میرا ساتھ دیتی ہے میرے ساتھ رہتی ہے

    میں نے لکھا تنہائی زوجیت کے خانے میں

    دوستوں سے جا کر جب مشورہ کیا تو پھر

    میں نے کچھ نہیں لکھا حیثیت کے خانے میں

    امتحاں محبت کا پاس کر لیا میں نے

    اب یہی میں لکھوں گا اہلیت کے خانے میں

    جب سے آپ میرے ہیں فخر سے میں لکھتا ہوں

    نام آپ کا اپنی ملکیت کے خانے میں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عامر امیر

    عامر امیر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY