اتنا بے نفع نہیں اس سے بچھڑنا میرا

اشفاق حسین

اتنا بے نفع نہیں اس سے بچھڑنا میرا

اشفاق حسین

MORE BYاشفاق حسین

    اتنا بے نفع نہیں اس سے بچھڑنا میرا

    انجمن ساز ہوا ہے دل تنہا میرا

    سرنگوں ہونے نہیں دیتا یہ احساس مجھے

    میں تو ٹوٹا ہوں مگر خواب نہ ٹوٹا میرا

    کون ہیں وہ جنہیں آفاق کی وسعت کم ہے

    یہ سمندر نہ یہ دریا، نہ یہ صحرا میرا

    ایک ہی لمحۂ موجود میں موجود ہوں میں

    اور اک لمحے کا ہونا ہے نہ ہونا میرا

    دل میں سو تیر ترازو ہوئے تب جا کے کھلا

    اس قدر سہل نہ تھا جاں سے گزرنا میرا

    کیسے ترسیل سخن کی کوئی صورت نکلے

    یہ زباں میری نہیں ہے نہ یہ لہجہ میرا

    میں ابھی سیر جہاں بینی میں گم ہوں اشفاقؔ

    آسماں دیکھ رہا ہے ابھی رستہ میرا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    اشفاق حسین

    اشفاق حسین

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    اشفاق حسین

    اشفاق حسین

    نعمان شوق

    اتنا بے نفع نہیں اس سے بچھڑنا میرا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY