جانے کیا دیکھا تھا میں نے خواب میں

بشر نواز

جانے کیا دیکھا تھا میں نے خواب میں

بشر نواز

MORE BYبشر نواز

    جانے کیا دیکھا تھا میں نے خواب میں

    پھنس گیا پھر جسم کے گرداب میں

    تیرا کیا تو تو برس کے کھل گیا

    میرا سب کچھ بہہ گیا سیلاب میں

    میری آنکھوں کا بھی حصہ ہے بہت

    تیرے اس چہرے کی آب و تاب میں

    تجھ میں اور مجھ میں تعلق ہے وہی

    ہے جو رشتہ ساز اور مضراب میں

    میرا وعدہ ہے کہ ساری زندگی

    تجھ سے میں ملتا رہوں گا خواب میں

    مآخذ :
    • کتاب : sooraj ko nikaltaa dekhuun (Pg. 587)
    • Author : Shaharyaar
    • مطبع : Farooq Argali (2013)
    • اشاعت : 1st

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY