جب عاشقی میں میرا کوئی رازداں نہیں

زاہد چوہدری

جب عاشقی میں میرا کوئی رازداں نہیں

زاہد چوہدری

MORE BYزاہد چوہدری

    جب عاشقی میں میرا کوئی رازداں نہیں

    ایسی لگی ہے آگ کہ جس کا دھواں نہیں

    گو میں شریک بزم سر آسماں نہیں

    وہ راز کون سا ہے جو مجھ پر عیاں نہیں

    میں سوچتا ہوں زیست میں ناکام ہو گیا

    میرے خلوص شوق کا جب امتحاں نہیں

    میرا مقام عشق بتاں میں ہے بے مثال

    گو میں رہین‌ منت پیر مغاں نہیں

    وہ عاشقی نہیں ہے کوئی کاروبار ہے

    جس عاشقی میں گرمیٔ سوز نہاں نہیں

    میں سوز و ساز شوق میں حد سے گزر گیا

    اب اس سفر میں میرا کوئی کارواں نہیں

    میری نوائے غم میں ہے شامل فغان گل

    کیسے کہوں چمن میں کوئی ہم زباں نہیں

    معمور ہو گیا ہے وہ سوز حیات سے

    جو مبتلائے گردش کون و مکاں نہیں

    شوق سفر میں ولولۂ دل نہیں رہا

    دشمن رہ حیات میں جب آسماں نہیں

    مآخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY