جب چلے جائیں گے ہم لوٹ کے ساون کی طرح

گوپال داس نیرج

جب چلے جائیں گے ہم لوٹ کے ساون کی طرح

گوپال داس نیرج

MORE BY گوپال داس نیرج

    جب چلے جائیں گے ہم لوٹ کے ساون کی طرح

    یاد آئیں گے پرتھم پیار کے چمبن کی طرح

    ذکر جس دم بھی چھڑا ان کی گلی میں میرا

    جانے شرمائے وہ کیوں گاؤں کی دلہن کی طرح

    میرے گھر کوئی خوشی آتی تو کیسے آتی

    عمر بھر ساتھ رہا درد مہاجن کی طرح

    کوئی کنگھی نہ ملی جس سے سلجھ پاتی وہ

    زندگی الجھی رہی برمہا کے درشن کی طرح

    داغ مجھ میں ہے کہ تجھ میں یے پتہ تب ہوگا

    موت جب آئے گی کپڑے لیے دھوبن کی طرح

    ہر کسی شخص کی قسمت کا یہی ہے قصہ

    آئے راجہ کی طرح جائے وہ نردھن کی طرح

    جس میں انسان کے دل کی نہ ہو دھڑکن نیرجؔ

    شاعری تو ہے وہ اخبار کے کترن کی طرح

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites