جب فکروں پر بادل سے منڈلاتے ہوں گے

کالی داس گپتا رضا

جب فکروں پر بادل سے منڈلاتے ہوں گے

کالی داس گپتا رضا

MORE BY کالی داس گپتا رضا

    جب فکروں پر بادل سے منڈلاتے ہوں گے

    انساں گھٹ کر سائے سے رہ جاتے ہوں گے

    دو دن کو گلشن پہ بہار آنے کو ہوگی

    پنچھی دل میں راگ سدا کے گاتے ہوں گے

    دنیا تو سیدھی ہے لیکن دنیا والے

    جھوٹی سچی کہہ کے اسے بہکاتے ہوں گے

    یاد آ جاتا ہوگا کوئی جب راہی کو

    چلتے چلتے پاؤں وہیں رک جاتے ہوں گے

    کلی کلی برہن کی چتا بن جاتی ہوگی

    کالے بادل گھر کر آگے لگاتے ہوں گے

    دکھ میں کیا کرتے ہوں گے دولت کے پجاری

    روپ کھلونا توڑ کے من بہلاتے ہوں گے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    جب فکروں پر بادل سے منڈلاتے ہوں گے نعمان شوق

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY