جب جب رفاقتوں سے گزرنا پڑا مجھے

رہبر جونپوری

جب جب رفاقتوں سے گزرنا پڑا مجھے

رہبر جونپوری

MORE BYرہبر جونپوری

    جب جب رفاقتوں سے گزرنا پڑا مجھے

    پر خار وادیوں میں اترنا پڑا مجھے

    عہد تغیرات میں جینے کے نام پر

    اپنی روایتوں سے مکرنا پڑا مجھے

    دریا کے شور و شر سے میں خائف نہ تھا مگر

    ساحل کے انتشار سے ڈرنا پڑا مجھے

    بچپن کے سب نقوش نگاہوں میں پھر گئے

    کچھ دن جو اپنے گاؤں ٹھہرنا پڑا مجھے

    اک لمحۂ حیات کی تزئین کے لئے

    صدیوں سمٹ سمٹ کے بکھرنا پڑا مجھے

    اس منزل فریب سے گزرا ہوں میں جہاں

    اپنا بھی اعتبار نہ کرنا پڑا مجھے

    مآخذ :
    • کتاب : Mauj-e-Sarab (Pg. 108)
    • Author : Rehbar Jaunpuri
    • مطبع : Rehbar Jaunpuri (1997)
    • اشاعت : 1997

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY